MOHAMMED MASOOD NOTTINGHAM

Page 9 of 10 Previous  1, 2, 3, 4, 5, 6, 7, 8, 9, 10  Next

View previous topic View next topic Go down

مجھے مٹی کے گھر بنانے کا شوق تھا (m,masood)UK

Post by Guest on Sun Mar 10, 2013 6:20 am

مجھے مٹی کے گھر بنانے کا شوق تھا
Poet:m,masood


مجھے مٹی کے گھر بنانے کا شوق تھا
اٴسے آشیانے گررانے کا شوق تھا


میں خود سے روٹھ جاتا ہئوں اس لیے
مجھۓ روٹھۓ ہئوے لوگ منانے کا شوق تھا


اٴسے وعدوں کی پاسداری پسند نہ تھی
لیکن مجھے حد نبانے کا شوق تھا


میں مصروف تھا تنہاہئووں کی تلاش میں
اٴسے لوگوں سے ملنے ملانے کا شوق تھا


وە کم ظرف تھا اس میں حیرت کی کیا بات
مجھے بے ظرف سے دل لگانے کا شوق تھا



By
Mohammed masood
Meadows
Nottingham
UK
200
[quote]

Guest
Guest


Back to top Go down

آپنی پیاری ماں کے نام (m,masood)UK

Post by Guest on Thu Mar 14, 2013 1:28 am

آپنی پیاری ماں کے نام
Poet:m,masood


زندگی میں کچھ کھویا اور کچھ پایا
لیکن تجھۓ کھونا نہیں چاہتا ماں


ذندگی نے کبھی ہسایا کبھی رولایا
لیکن تجھے رولانا نہیں چاہتا ماں


یاد آتی تیری بچپن کی وە لوری
اس لیے تیری گود کے سوا کہیں


اور کہیں سونا نہیں چاہتا ماں
لیکن تجھۓ کھونا نہیں چاہتا ماں


کتنا ڈھونڈا تھا تو نے بچپن میں
اب کیوں نہیں ڈونڈتی تو ماں


کیسے زندا رە پاوں گا تیرے بغیر
کبھی فرصت ملے مجھے یہ بتا ماں


کیا ہئوں میں تیرے دل میں اب تک
دیکھ میرے دل کو چیر آپنے آپکو ماں


زندگی تو نے میری روشن کر دی
خود کس اندھیرے کھو گۂی تو ماں


کبھی تو کھلا مجھۓ آپنے ہاتھ کی روٹئ
آج کل بھوک بہت لگتی ہے مجھۓ ماں


کہاں ہے تو ماں گلے لگا بےبس مسعود کو
نہ جانے کس کاش نکل جاۓ میری سانس ماں


By
Mohammed masood
Meadows
Nottingham
UK
201

Guest
Guest


Back to top Go down

آنسو بنے الفاظ اور الفاظ بنی غزل(m,masood)UK

Post by Guest on Thu Mar 14, 2013 1:32 am

آنسو بنے الفاظ اور الفاظ بنی غزل
Poet:m,masood



دل والوں کا درد یوں بیان ہئوتا ہے
لکھ دو کاغز پر تو کم محسوس ہئوتا ہے


یہ اثر اٴن بے وفا کی بے وفاہئوں کا ہے
کہ ہر لفظ آج درد میں ڈوبا ہئوتا ہے


ہر دل کو کسی نہ کسی کا اتنظارہئوتا ہے
کئ ساری راہئوں سےگزرتے یہ جیوان پار ہئوتا ہے


ہر پل دل سپنے بونتا ہے تہناہئوں کے ساۓ میں
محبت سے ہی جینے کا احساس ہئوتا ہے


پانے سے کھونے کا مزە اور ہئوتا ہے
بند آ نکھوں میں رونے کا مزە اور ہئوتا ہے


آنسو بنے الفاظ اور الفاظ بنی غزل مسعود
اٴس غزل میں تیرا ہئونے کا مزە اور ہئوتا ہے



By
Mohammed masood
Meadows
Nottingham
UK
202

Guest
Guest


Back to top Go down

اک ترے درد کو پہلو ميں چھپارکھا ہے (m,masood)uk

Post by Guest on Sun Jul 21, 2013 4:35 pm

اک ترے درد کو پہلو ميں چھپارکھا ہے
،اور تو پاس مرے ہجر ميں کيا رکھا ہے


دل سے ارباب وفا کا ہے بھلانا مشکل
،ھم نے ان کے تغافل کو سنا رکھا ہے


تم نے بال اپنے جو پھولوں ميں بسارکھے ہيں
،شوق کو اور بھي ديوانہ بنا رکھا ہے


سخت بے درد ہے تاثير محبت کہ انہيں
،بستر ناز پہ سوتے سے جگا رکھا ہے


آہ وہ ياديں کہ اس ياد کو ہو کر مجبور
،دل مايوس نے مدت سے بہلا رکھا ہے


کيا تامل ہے مرے قتل ميں اے بازوئے يار
،اک ھي وار ميں سر تن سے جدا رکھا ہے


حسن کو جور سے بيگانہ نہ سمجھ، کہ اسے
،يہ سبق عشق نے پہلے ہي پڑھا رکھا ہے


تيري نسبت سے ستم گر ترے مايوسوں نے
،دل حرماں کو بھي سينے سے لگا رکھا ہے


کہتے ہيں اہل جہاں درد محبت جس کو
،نام اسي کا مضطر نے دوا رکھاہے


نگہ يار سے يکان قضا کا مشتاق
،دل مجبور نشانے پہ کھلا رکھا ہے


اسے کا انجام بھي کچھ سوچ ليا ہے حسرت
تو نے ربط ان سے جو درجہ بڑھا رکھا ہے


203

by
mohammed masood
meadows
nottingham
uk


Last edited by mohammed masood on Sun Jul 21, 2013 4:57 pm; edited 1 time in total

Guest
Guest


Back to top Go down

یہ ذرا ذرا سی بات پر ، طرح طرح کے عذاب کیوں (m,masood)uk

Post by Guest on Sun Jul 21, 2013 4:51 pm


یہ ذرا ذرا سی بات پر
طرح طرح کے عذاب کیوں


جو کسی سے بھی خفا نہ ھو
مجھے اس راہبر کی تلاش ھے


مجھے لغزشوں پہ ھر اک گھڑی،
کوئی ٹوکتا ھے بار بار


جسے کر کے دل کو دکھ نہ ھو،
مجھے اس گناه کی تلاش ھے


میں ڈھونڈتا ھوں وه خزاں،
جسے گلشنوں سے پیار ھو


جسے کسی چراغ سے نہ بیر ھو
مجھے اس ھوا کی تلاش ھے

ان حسن کدوں سے شور سے
میری سماعتیں ہیں اجنبی


ھو جس پکار میں مخلصی
مجھے اس صدا کی تلاش ھے


بنا ہمسفر کے کب تلک
کوئی مسافتوں میں لگا رھے


جہاں کوئی کسی سے جدا نہ ھو
مجھے اس راه کی تلاش ھے


مجھے دیکھ کر جو اک نظر،
میرے سارے درد سمجھ سکے


جو اس قدر ھو چاره گر
مجھے اس نگاه کی تلاش ھے

by
mohammed masood
meadows
nottingham
uk
204

Guest
Guest


Back to top Go down

ﻣﺤﺒﺖ کچھ ﻧﮩﯿﮟ ﺩﯾﺘﯽ (m,masood)uk

Post by Guest on Mon Jul 22, 2013 5:41 am

ﻣﺤﺒﺖ کچھ ﻧﮩﯿﮟ ﺩﯾﺘﯽ
ﺭﻭﺍﯾﺖ کے ﺍﺳﯿﺮﻭﮞ ﮐﻮ
ﺳﻮﺍﺋﮯ ﺧﺎﻣﺸﯽ کے
ﺟﻮ ﺭﮔﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺑﮩﺘﯽ ﺭﮨﺘﯽ ہے
ﺳﻮﺍﺋﮯ ﺍﯾﮏ ﻭﯾﺮﺍﻧﯽ
ﺟﻮ ﺩﻝ پہ ﭼﮭﺎﺋﯽ ﺭﮨﺘﯽ ہے
ﺳﻮﺍﺋﮯ ﺩﺭﺩ ﺭﺳﻮﺍﺋﯽ
ﺟﻮ ﭼﺎﺭﻭﮞ ﺳﻤﺖ ﮨﻮﺗﺎ ہے
ﺳﻮﺍﺋﮯ ﺍﯾﮏ ﺍﺫﯾﺖ
ﺟﻮ ﺳﺎﺭﯼ ﻋﻤﺮ ﺭﮨﺘﯽ ہے
ﮨﻢ ﺍﭘﻨﺎ ﺳﺮ ﺍﭨﮭﺎ ﮐﺮ ﭼﻞ ﻧﮩﯿﮟ
ﺳﮑﺘﮯ
ﮔﻨﺎﮦ ﮐﺮﺗﮯ ﻧﮩﯿﮟ
ﭘﮭﺮ ﺑﮭﯽ ﮔﻨﮭﮕﺎﺭﻭﮞ ﻣﯿﮟ ﺷﺎﻣﻞ ہیں
ﺭﻭﺍﯾﺖ کے ﺍﺳﯿﺮﻭﮞ ﮐﻮ
ﻣﺤﺒﺖ کچھ ﻧﮩﯿﮟ ﺩﯾﺘﯽ .....!


by
mohammed masood
meadows
nottingham
uk
205


Last edited by mohammed masood on Fri Jul 26, 2013 1:46 am; edited 1 time in total

Guest
Guest


Back to top Go down

گنگناتے ہوئے آنچل کی ہَوا دے مجھ کو (m,masood)uk

Post by Guest on Thu Jul 25, 2013 5:17 am

گنگناتے ہوئے آنچل کی ہَوا دے مجھ کو
اُنگلیاں پھیر کے بالوں میں سلادے مجھ کو


جس طرح فالتو گلدان پڑے رہتے ہیں
اپنے گھر کے کسی کونے سے لگا دے مجھ کو


یاد کر کے مجھے تکلیف ہی ہوتی ہوگی
ایک قصہ ہوں پُرانا سا بھُلا دے مجھ کو


ڈوبتے ڈوبتے آواز تری سُن جائوں
آخری بار تو ساحل سے صدا دے مجھ کو


مَیں ترے ہجر میں چُپ چاپ نہ مر جائوں کہیں
مَیں ہوں سکتے میں کبھی آکے رُلا دے مجھ کو


دیکھ میں ہوگیا بدنام کتابوں کی طرح
میری تشہیر نہ کر اَب تو جلا دے مجھ کو


روٹھنا تیرا میری جان لئے جاتا ہے
ایسے ناراض نہ ہو، ہنس کے دِکھا دے مجھ کو


اور کچھ بھی نہیں مانگا میرے مالک تجھ سے
اس کی گلیوں میں پڑی خاک بنا دے مجھ کو


لوگ کہتے ہیں کہ یہ عشق نگل جاتا ہے
مَیں بھی اس عشق میں آیا ہوں، دُعا دے مجھ کو


یہی اوقات ہے میری تیرے جیون میں کہ میں
کوئی کمزور سا لمحہ ہوں، بھُلا دے مجھ کو

206


Last edited by mohammed masood on Fri Jul 26, 2013 1:47 am; edited 1 time in total

Guest
Guest


Back to top Go down

اُداس راتوں میں تیز کافی کی تلخیوں میں

Post by Guest on Thu Jul 25, 2013 5:19 am

اُداس راتوں میں تیز کافی کی تلخیوں میں
وہ کچھ زیادہ ہی یاد آتا ہے سردیوں میں

مجھے اجازت نہیں ہے اس کو پکارنے کی
جو گونجتا ہے لہو میں سینے کی دھڑکنوں میں

وہ بچپنا جو اُداس راہوں میں کھو گیا تھا
مَیں ڈھونڈتا ہوں اُسے تمھاری شرارتوں میں

اُسے دلاسے تو دے رہاہوں مگر یہ سچ ہے
کہیں کوئی خوف بڑھ رہا ہے تسلیوں میں


تم اپنی پوروں سے جانے کیا لکھ گئے تھے جاناں
چراغ روشن ہیں اَب بھی میری ہتھیلیوں میں


جو تُو نہیں ہے تو یہ مکمل نہ ہو سکیں گی
تری یہی اہمیت ہے میری کہانیوں میں


مجھے یقیں ہے وہ تھام لے گا بھرم رکھے گا
یہ مان ہے تو دِیے جلائے ہیں آندھیوں میں


ہر ایک موسم میں روشنی سی بکھیرتے ہیں
تمھارے غم کے چراغ میری اُداسیوں میں

Guest
Guest


Back to top Go down

زخم مُسکراتے ہیں، اَب بھی تیری آہٹ پر

Post by Guest on Thu Jul 25, 2013 5:21 am

زخم مُسکراتے ہیں، اَب بھی تیری آہٹ پر
درد بھول جاتے ہیں، اَب بھی تیری آہٹ پر

شبنمی ستاروں میں پھول کِھلنے لگتے ہیں
چاند مسکراتے ہیں، اَب بھی تیری آہٹ پر

عمر کاٹ دِی لیکن بچپنا نہیں جاتا
ہم دِیے جلاتے ہیں، اَب بھی تیری آہٹ پر

گھنٹیاں سی بجتی ہیں رقص ہونے لگتا ہے
درد جگمگاتے ہیں، اَب بھی تیری آہٹ پر

تیری یاد آئے تو نیند جاتی رہتی ہے
خواب ٹوٹ جاتے ہیں، اَب بھی تیری آہٹ پر

جو ستم کرے آ کر سب قبول ہے دِل کو
ہم خوشی مناتے ہیں، اَب بھی تیری آہٹ پر

اب بھی تیری آہٹ پر چاند مسکراتا ہے
خواب گنگناتے ہیں، اَب بھی تیری آہٹ پر

تیرے ہجر میں ہم پر اِک عذاب طاری ہے
چونک چونک جاتے ہیں، اَب بھی تیری آہٹ پر

دستکیں سجانے کے منتظر نہیں رہتے
راستے سجاتے ہیں، اَب بھی تیری آہٹ پر

اَب بھی تیری آہٹ پر آس لوٹ آتی ہے
ہم دِیے جلاتے ہیں، اَب بھی تیری آہٹ پر

Guest
Guest


Back to top Go down

کام جتنا تھا محبت کا محبت نے کیا

Post by Guest on Fri Aug 23, 2013 12:59 am


Kaam jitna tha mohabbat ka, mohabbat ne kiya,
Jitna hona tha zamaney se, zamaney se hua..


کام جتنا تھا محبت کا محبت نے کیا
جتنا یونا تھا زمانے سے زمانے سے ہوا


mohammed masood
nottingham
uk

Guest
Guest


Back to top Go down

Bayaan Har Kisi Se Hijr-O-Wisaal Karty Ho

Post by Guest on Wed Aug 28, 2013 2:11 am



Bayaan Har Kisi Se Hijr-O-Wisaal Karty Ho
Kiun Apna Shehr Me Jeena Muhaal Karty Ho,

بیان ہر کسی سے ہجر او ویسال کرتے ہو
کیوں اپنا شہر میں جینا محال کرتے ہو

Bichhar Ke Bhala Miley Han Musaafir Bhi
Kiun Apny Aap Ko Yunhi Niddhal Karty Ho,

بچھڑ کے بھلا ملے ہیں مسافر بھی
کیوں آپنے آپ کو یوں ہی نڈھال کرتے ہو

Suna He Woh Bhi Tumhain Poochta Hay Aisy Hi
Tum Us Ke Bary Me Jesey Sawal Karty Ho,

سنا ہے وہ بھی تمھیں پوچھتا ہے ایسے ہی
تم اَس کے بارے میں جیسے سوال کرتے ہو

Woh Aashnaai Usy Yaad Hi Na Ho Shayd
Woh Jis Ke Nam Pe Sb Maah-O-Saal Karty Ho,

وہ آشیاں اَسے یاد ہی نہ ہو شاہد
وہ جس کے نام پر سب ماہ او سال کرتے ہو

Bohat Aziz Tha Shayd Woh Is Lye
Bichharny Waly Ka Ab Tak MALAAL Karty Ho...!!!

بہت عزیز تھا شاہد وہ اس لیے
بچھڑنے والے کا اب تک ملال کرتے ہو

mohammed masood
meadows
nottingham
uk
/center]

Guest
Guest


Back to top Go down

Aaaj mujh ko galle lagaale maan

Post by Guest on Thu Aug 29, 2013 3:43 am




Aaaj mujh ko galle lagaale maan,
Piyaas dil ki tu bujha de maan..!


آج مجھ کو گلے لگا لے ماں
پیاس دل کی تو بجھا دے ماں


Teri banhoo me bitta bachpan tha,
Aaaj bachpan waapas ladde maan..!



تیری بانہوں میں بیتا بچپن تھا
آج بچپن واپس لا دے ماں


Mei tadhap tee hun yaad me teri,
Deed apni mujhe dikhaa de maan..!


میں تڑپتی ہوں یاد میں تیری
دید اپنی مجھے دیکھا دے ماں


Aaj ro ro ke mei duwaa maangu,
Kon sa deas tu Waapas aaja maan..!


آج رو رو کے میں دعا مانگوں
کون سے دیس تو واپس آ جا ماں


Dam gutaa jaata he tere bin maan,
Yaa mujhe paas tu bulaale maan !!


دم گھوٹتا جاتا ہے تیرے بن ماں
یا مجھے پاس تو بلا لے ماں



by
mohammed masood
meadows
nottingham

uk

Guest
Guest


Back to top Go down

Dil mera aaj mujh se kehta he

Post by Guest on Thu Aug 29, 2013 5:24 am



Dil mera aaj mujh se kehta he
gar ijaazat mujhe khudaa de de,


دل میرا آج مجھ سے کہتا ہے
اگر اجازت مجھے خدا دے دے

Sajda apni maa ko me karlun
gar ijaazat khuda mujhe dede..!

سجدہ اپنی ماں کو میں کر لوں
اگر اجازت مجھے خدا دے دے

Mafi mujh ko tu khuda de de
chum lun me gar maa ke pro ko,

معافی مجھ کو تو خدا دے دے
چوم لوں میں اگر ماں کے پیروں کو

Us ke peroo mei meri jannat he
mafi gar tu mujhe khuda de de..!

اَس کے پیروں میں میری جنت ہے
معافی اگر تو مجھ کو خدا دے دے

Tu kahe to me khudaa manu ?
Gar ijaazat tu khudaa de de,

تو کہے تو میں خدا مانوں
اگر اجازت تو مجھے خدا دے دے

Usne pe-daa kiya he pala mujhe
mujh pe ehsaan kit ne kar dale..!

اَس نے پیدا کیا ہے پہلے مجھے
مجھ پر احسان کتنے کر ڈالے

Kese utrenge ye sabhi mujh se
mere hisse me meri maa de de,

کیسے اَتاروں گا یہ سبھی مجھ سے
میرے حصے میں میری ماں دے دے

Aaj bebas he kitni budhi maa
meri ye umr bhi usse de de..!

آج بے بس ہے کتنی بوڑھی ماں
میری یہ عمر بھی ماں کو دے دے




mohammed masood
meadows
nottingham
uk

Guest
Guest


Back to top Go down

تیری لاجواب چاہت کو ہم بھلائیں کیسے

Post by Guest on Fri May 02, 2014 5:38 am

تیری لاجواب چاہت کو ہم بھلائیں کیسے
شاعر محمد مسعود نوٹیگم یو کے




تیری لاجواب چاہت کو ہم بھلائیں کیسے
تم کو بھول کر خود کو چین دلائیں کیسے




نجانے کون سی کشش تیرے پاس لے آتی ہے
تیرے پاس آ کر تجھ میں سمائیں کیسے




ہم نے تو دل سے چاہا ہے تجھے مگر
تیری چاہت کے قابل خود کو بنائیں کیسے




کیوں پوچھتے ہو آنسوؤں کی شدت
ہم اِن میں تیرا عکس دیکھائیں کیسے




ہم تو صرف تم سے محبت کرتے ہیں
مگر تمہیں یہ احساس دلائیں کیسے

Guest
Guest


Back to top Go down

درد کی سیاہی سے لکھایہ میرا نصیب ہے

Post by Guest on Fri May 02, 2014 5:42 am

درد کی سیاہی سے لکھایہ میرا نصیب ہے
بک گئی میر ی محبت کیونکہ میں غریب تھا



پل بھر کوتو ہم بھی نہ سنبھل پائے تھے
گزرا ہے جو ہم پروہ حادثہ بھی عجیب تھا



تمام عمر زندگی سمجھ کر جسے چاہا
آخر سفر میں وہ دل کے قریب تھا



خوشیاں بانٹا رہا میں سب سے زندگی کی
اب غم کے اندھیروں میں نہ کوئی شریک تھا



دل دنیا دیوتا سب پتھر کے ہیں
پوجا ایک پیار کو پر وہ بھی فریب تھا

Guest
Guest


Back to top Go down

چھوڑ دی تیری دنیا تیری خوشی کے لیے

Post by Guest on Fri May 02, 2014 5:46 am

چھوڑ دی تیری دنیا تیری خوشی کے لیے
جی سکیں گے نہ اب ہم اور کسی کے لیے




تیرا ملنا اور بچھڑنا ایک خواب تھا
تیری چاہت تو تھی دل لگی کے لیے




میرے آنگن میں ہر سو اندھیرا رہا
چراغ ڈھونڈا بہت روشنی کے لیے




اپنی قسمت میں اشکوں کی سوغات تھی
ہم تو ترستے رہے ایک ہنسی کے لیے




تیری جدائی سے بڑھ کر اور کیا غم ہو گا
مسعود زخم کافی ہیں یہی زندگی کے لیے

Guest
Guest


Back to top Go down

YE soch ke main sharaab nahin peeta

Post by Guest on Mon May 05, 2014 6:45 pm

YE soch ke main sharaab nahin peeta
Poet : M Masood Nottingham UK




Ye soch ke main sharaab nahin peeta ke kitna piyunga,
Har jaam pe aayegi teri yaad, itna piyunga to kitna jiyunga.



Bharunga tere diye jakhmon ko ab sharaab se,
Aansuon ke dhaage se aur kitna siyunga



Badh jati umar meri jo ho jata didaar,
Ek tasveer ke sahare aur kitna jiyunga,



Jaam aur aansu dono utarunga ab halak se,
Dekhna ye hai kisko kitna piyunga




M MASOOS NOTTINGHAM UK


[/center]

Guest
Guest


Back to top Go down

زندگی کے کسی موڑ پر دو باتیں ہونگی پیار کی

Post by Guest on Thu May 08, 2014 5:07 am

زندگی کے کسی موڑ پر

امید تھی کبھی مل کر زندگی کے کسی موڑ پر
دو باتیں ہونگی پیار کی
کیا معلوم تھا یہ زندگی موڈ لے گی اپنی
راہ اس قدر اور کر دے گی برسات پیار کی .



Ummeed Thi Kabhi Milkar zindagi Ke Kisi Mod Par
Do Baatein Hongi Pyaar Ki
Kya Maloom Tha Yeh zindagi Mode Legi Apni
Raah Is Kadar Aur Kar Degi Barsaat Pyaar Ki

Guest
Guest


Back to top Go down

اپنی زندگی کا الگ اصول ہے

Post by Guest on Thu May 08, 2014 5:16 am

کانچ کے ٹکڑوں پر


اپنی زندگی کا الگ اصول ہے
اسکی خاطر تو کانٹے بھی قبول ہے
ہنس کے چل دو
کانچ کے ٹکڑوں پر
اگر وہ کہے
یہ میری بچھائے ہوئے پھول ہے




Apni Zindgi Ka Alag Usul H
Uski Khatir To Kante B Kabul H
Hans Ke Chal Du
Kanch Ke Tukdo Pr
Agar Wo Kahe
Ye Mere Bichaye Huye Phool H

Guest
Guest


Back to top Go down

میری نیند مجھ سے بچھڑ گئی

Post by Guest on Tue Oct 21, 2014 2:38 am

میری نیند مجھ سے بچھڑ گئی
شاعر محمد مسعود نوٹنگھم یو کے


میری نیند مجھ سے بچھڑ گئی
میرے سپنے مجھ سے جُدا ہو گئے
یہ بڑا ہی دُکھ اور غم کا موقع ہے


زرا لوٹ آؤ میں بہت اُداس ہوں


کوئی پُھوٹ پُھوٹ کر رو رہا ہے
ابھی تلک تو میری ذات ہی ہے
میرے دل میں ایک تازہ زخم ہے


زرا لوٹ آؤ میں بہت اُداس ہوں


تیرے دم سے زندہ ہوں آج بھی
تُو ہی تو جینے کی ایک اُمید ہے
تیرے بعد میرا جینا بہت محال ہے


زرا لوٹ آؤ میں بہت اُداس ہوں
زرا لوٹ آؤ میں بہت اُداس ہوں

Guest
Guest


Back to top Go down

دل ناداں کو سمجھاؤ محبت زخم دیتی ہے

Post by Guest on Tue Oct 21, 2014 2:58 am


دل ناداں کو سمجھاؤ
محبت زخم دیتی ہے
تم اپنی ضد سے باز آؤ
محبت زخم دیتی ہے

محبت کا سفر آغاز کرنے پر
تمہیں ہم نے کہا تھا کہ رک جاؤ
محبت زخم دیتی ہے

اسے شدت سے چاہا ہے
تو یہ بھی ذہن میں رکھو کہ

بڑھ جائے اگر حد سے
محبت زخم دیتی ہے

Guest
Guest


Back to top Go down

ہوا تو کُچھ بھی نہیں مسعود

Post by Guest on Tue Oct 21, 2014 5:29 am

ہوا تو کُچھ بھی نہیں مسعود
شاعر محمد مسعود نوٹنگھم یو کے


بس تھوڑے سے مان ہی تو ٹوٹے ہیں
بس تھوڑے سے خُواب ہی تو بکھرے ہیں
بس تھوڑے سے لوگ ہی تو بچھڑے ہیں


ہوا تو کُچھ بھی نہیں مسعود

تھوڑی سی نیندیں اُڑ گئی ہیں
تھوڑی سی خوشیاں چھن گئی ہیں
تھوڑا سا چین ہی تو گنوایا ہے


ہوا تو کُچھ بھی نہیں مسعود


اپنا آپ گنوایا ہے
آنکھوں کو برسنا سکھایا ہے
محبتوں کا صلہ پایا ہے


ہوا تو کُچھ بھی نہیں مسعود


کسی اپنے نے بہت رُولایا ہے
ہوا تو کُچھ بھی نہیں مسعود

Guest
Guest


Back to top Go down

آنسو نہیں‌ رُکتے میری آنکھوں میں‌ ابھی تک

Post by Guest on Tue Nov 25, 2014 6:54 am

Aansu nahi thamte hain aankhon main abhi tak
آنسو نہیں‌ رُکتے میری آنکھوں میں‌ ابھی تک
شاعر محمد مسعود
نونٹگھم یو کے
POET: M,MASOOD

Aansu nahi thamte hain aankhon main abhi tak
Jaate hue rota woh mujhe chorr Gaya Tha
آنسو نہیں‌ رُکتے میری آنکھوں میں‌ ابھی تک
جاتے ہوئے روتا وہ مجھے چھوڑ گیا تھا


Armano ki Duniya ke anmol se sapne
pal main woh mere saamne sab torr Gaya Tha
ارمانوں کی دُنیا کے انمول سے سپنے
پل میں‌وہ میرے سامنے سب توڑ گیا تھا


Jaan deti thi meri her baat pe lekin yun hi
Besabab Duniya se mera rukh morr Gaya Tha
جان دیتا تھا میری ہر بات پہ لیکن یونہی
بے سبب دُنیا سے میرا رُخ موڑ گیا تھا


Din ki tanhayi ka gham, raaton ki uddasi humraah
Saare ghamon se rishta mera jorr Gaya Tha
دن کی تنہائی کا غم راتوں‌کی اُداسی ہمراہ
رشتہ میرا سارے غموں سے جوڑ گیا تھا


Aey kaaaaash koi jaa ke usse pooche
Yahan kis ke sahare pe mujhe chor Gaya Tha
اے کاش! کوئی جا کے اُس سے یہ پوچھے
تنہا مجھے کس کے سہارے چھوڑ گیا تھا

Guest
Guest


Back to top Go down

کتنی مشکل سے کٹی کل کی میری رات نہ پوچھو

Post by Guest on Wed Nov 26, 2014 5:37 am

کتنی مشکل سے کٹی کل کی میری رات نہ پوچھو
محمد مسعود نونٹگھم یو کے



کتنی مشکل سے کٹی کل کی میری رات نہ پوچھو
دل سے نکلی ہوئی ہونٹوں میں دبی بات نہ پوچھو



وقت جو بدلے تو انسان بھی بدل ہی جاتے ہیں اکثر
کیا نہیں دکھلاتے زندگی میں گردش حالات نہ پوچھو



وہ کسی کا ہو بھی گيا اور مجھے خبر بھی نہ ہوئی
کس طرح اس نے چھڑایا ہے مجھ سے ہاتھ نہ پوچھو



اس طرح پل بھر میں مجھے بیگانہ کر دیا اس نے
کس طرح اپنوں سے کھائی ہے میں نے مات نہ پوچھو



اب تیرا پیار نہیں ہے تو مسعود کچھ بھی نہیں ھے
کتنی مشکل سے بنی تھی دل کی کائنات نہ پوچھو

Guest
Guest


Back to top Go down

ہمیں تو اِب بھی وہ گُزرا زمانہ یاد آتا ہے

Post by Guest on Tue Dec 02, 2014 5:30 am

Hamay to ab bhi woh guzra zamana yaad aata hai
ہمیں تو اِب بھی وہ گُزرا زمانہ یاد آتا ہے
محمد مسعود نونٹگھم یو کے
MOHAMMED MASOOD


Hamay to ab bhi woh guzra zamana yaad aata hai
Tumhay bhi kya kabhi koi deewana yaad aata hai
ہمیں تو اِب بھی وہ گُزرا زمانہ یاد آتا ہے
تمہیں بھی کیا کبھی کوئی دیوانہ یاد آتا ہے


Hawain tez thi, baarish bhi thi, toofan bhi tha, lekin
Tera aisay mein bhi vaada nibhana yaad aata hai
ہوائیں بھی تھی بارش بھی تھی طوفان بھی تھا لیکن
تیرا ایسے میں بھی وعدہ نبھانا یاد آتا ہے


Guzar chuki thi bahut raat baton baton mein,
Phir uth kay woh tera shama bhujana yaad aata hai
گُزر چُکی تھی بہت رات باتوں باتوں میں
پھر اُٹھ کے وہ تیرا شمع بُجھانا یاد آتا ہے


Ghatain kitni dekhi hain par mujhay MASOOD
Kisi ka jukh par woh zulfain giraana yaad aata hai
چاہتیں کتنی دیکھی ہیں پر مجھے مسعود
کسی کا جُھکا پر وہ زولفیں گرانا یاد آتا ہے


Hamay to ab bhi woh guzra zamana yaad aata hai,
Tumhay bhi kya kabhi koi deewana yaad aata hai
ہمیں تو اِب بھی وہ گُزرا زمانہ یاد آتا ہے
تمہیں بھی کیا کبھی کوئی دیوانہ یاد آتا ہے

Guest
Guest


Back to top Go down

Re: MOHAMMED MASOOD NOTTINGHAM

Post by Sponsored content


Sponsored content


Back to top Go down

Page 9 of 10 Previous  1, 2, 3, 4, 5, 6, 7, 8, 9, 10  Next

View previous topic View next topic Back to top

- Similar topics

 
Permissions in this forum:
You cannot reply to topics in this forum